Web
Analytics
عجیب و غریب واقعہ۔۔۔ سید ثاقب شاہ – Lahore TV Blogs
Home / کہانیاں / عجیب و غریب واقعہ۔۔۔ سید ثاقب شاہ

عجیب و غریب واقعہ۔۔۔ سید ثاقب شاہ

کچھ دن قبل ایک دوست بس میں سفر کر رہا تھا. اچانک اس نے دیکھا کہ چار نوجوان بس میں داخل ہوئے اس میں سے ایک تھری پیس سوٹ میں ملبوس تھا. اسکے پاس آ بیٹھا. دونوں کے درمیان کچھ دیر بعد رسمی گفتگو ہوئی. کچھ دیر بعد وہ شخص میرے دوست سے مخاطب ہوا اور کہنے لگا : ” تم فلاں بینک میں ملازمت کرتے ہوں اور ابھی دو لاکھ روپے لیکر گھر جاریے ہوں”. اس نے حیران ہوکر کہا میں نے کبھی دو لاکھ روپے دیکھے بھی نہیں ہے لیکر جانا دور کی بات ہے. اس شخص نے پسٹل دیکھاتے ہوئے میرے دوست کو خوب دھمکایا. بعد ازاں

اسے کہا تم بال بال بچ گئے ہم تمہیں موت کی گھاٹ اتاردیتے مگر تم وہ نہیں جسے ہم مارنا چاہتے تھے. تم اپنا بٹھوا ہمارے حوالے کردوں. دوست نے بٹھوا انہیں تھمادیا. نامعلوم شخص یعنی چور نے بٹھوے کو کیش سے خالی کردیا اسی دوران اے. ٹی. کارڈ چوری جے ہتھے لگ گیا اس نے فوراً اپنے دوسرے ساتھی کو اے. ٹی. ایم دیتے ہوئے کہا کہ فی الفور جاکر اے.ٹی.ایم سے پیسے نکالوں اور دوست کی کنپٹی پر پسٹل رکھتے ہوئے کہا کہ پاسپورڈ بتاو اگر غلط پاسپورڈ بتایا تو گولی مار دوں گا.چور میرے دوست سے مخاطب ہو کر کہتا ہے کہ جوں ہی میرا ساتھی تمہارا اے. ٹی. ایم کارڈ لیکر سے. ٹی ایم پہنچے گا وہ مجھے کال کرے گا تم نے فوراً مجھے کارڈ کا پاسپورڈ بتانا یے.اسی اثنا میں بس کسی چورنگی کے قریب رکتی یے تو میرے دوست کی نظر چورنگی پر کھڑی پولیس وین پر پڑتی ہے. اس وقت وہ بس کی بلکل پچھلی اور آخری نشستوں پر دروازے کے قریب بیٹھا ہوا ہے اور ایک چور اسکے ساتھ والی نشست پر موجود ہے دوسرا بس کے دروازے پر کھڑا ہے. اتنے میں میرا دوست دروازے پر کھڑے چور کو اپنی پوری طاقت سے بس سے باہر دھکا دیتا ہے اور خود بھی باہر چھلانگ لگا کر چور یے چور یے کی زوردار آوازیں لگانے لگتا ہے. پولیس-اہلکاروں تک جب یہ آواز پہنچتی ہے تو پولیس پہلے ہوائی فائرنگ کرتے ہیں اور پھر ایک چور پولیس کی فائرنگ سے موقع ہی پر مارا جاتا ہے جبکہ دوسرا ڈر کر خود کو پولیس کے حوالے کر دیتا ہے.کچھ ہی دیر میں پولیس کی بھاری نفری کے ساتھ پولیس کے اعلی حکام و افسران جائے وقوعہ پر پہنچ کر میرے دوست سمیت ٹھیک وقت پر درست کارنامہ سر انجام دینے والے پولیس اہلکاروں کو شاباشی دیتے ہیں.بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پولیس کا کہنا تھا کہ ایک بہت بڑا سرغنہ گروپ کا سربراہ مارا گیا ہے. جو فیصل آباد سے چل پڑا تھا. ہم عوام سے اسی قسم کے تعاون کی اپیل کرتے ہیں اور امید رکھتے ہیں کہ عوام اسی طرح دہشتگردوں کو پکڑوانے فورسز کے ساتھ تعاون جاری رکھے گی.