Web
Analytics
”یہ وقت بھی گزر جائے گا“ – Lahore TV Blogs
Home / خصوصی فیچرز / ”یہ وقت بھی گزر جائے گا“

”یہ وقت بھی گزر جائے گا“

سلطان محمود غزنوی نے ایک دن اپنے دربار میں ایک انگوٹھی دکھائی اور اپنے تمام درباریوں سے کہا ”میں چاہتا ہوں آپ میں سے کوئی شخص اس انگوٹھی پر کوئی ایسا فقرہ لکھ دے جسے میں خوشی کے وقت پڑھوں تو میں اداس ہو جاؤں اور جب میرے اوپر اداسی کا وقت آئے تو میں یہ فقرہ پڑھوں اور میں خوش ہو جاؤں“ دربار میںسے کسی نے یہ چیلنج قبول نہیںکیا۔ جب سب ہار گئے توسلطان محمود غزنوی نے انگوٹھی اپنے غلام ایازکے حوالے کر دی‘ایاز نے بادشاہ سے انگوٹھی لی ‘ ایک دن کی مہلت طلب کی اوردوسرے دن بادشاہ کو انگوٹھی واپس کر دی۔ بادشاہ نے انگوٹھی دیکھی تو اس پر لکھا تھا ”یہ وقت بھی گزر جائے گا“۔ یہ فقرہ خواتین وحضرات اس قدر جاندار تھا کہ جب بادشاہ اداس ہوتا تھا تو وہ اپنا ہاتھ اوپر کر کے انگوٹھی پر نظر ڈالتا تھا اور یہ پڑھ کر کہ ”یہ وقت بھی گزر جائے گا“ خوش ہو جاتا تھا اور وہ جب

خوشی کے عالم میں یہ پڑھتا تھا ”یہ وقت بھی گزر جائے گا“ تو وہ اداس ہو جاتا تھا۔وقت واقعی ایک ایسی خوفناک حقیقت ہے جس کے معمول میں دنیا کے کسی شخص کیلئے کسی قسم کی تبدیلی نہیں آتی۔ کائنات کی سوئیاں آج تک واقعہ معراج کے علاوہ کبھی نہیں رکیں۔ وقت گزر جاتا ہے اور ہمارے پاس اس وقت کی یادوں اور افسوس کے علاوہ کچھ نہیں بچتا۔ انسان اپنے برے وقت کو ٹال نہیں سکتا لیکن یہ اپنی حکمت‘ دانائی اور سمجھداری کے ذریعے اس برے وقت کی شدت کم کر سکتا ہے۔ یہ وقت کی دی ہوئی مہلت کو اچھا بھی بنا سکتا ہے تا کہ آنے والے لوگ اسے زمانوں تک یاد رکھ سکیں۔وقت کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ برے سے برے وقت میں ایک خوبی ہوتی ہے اور اچھے سے اچھے وقت میں ایک خامی ہوتی ہے۔ برے وقت کی خوبی یہ ہوتی ہے کہ یہ گزر جاتا ہے اور اچھے وقت میں یہ خامی ہوتی ہے کہ یہ بھی گزر جاتا ہے۔ اب سوال یہ ہے کہ انسان کیا کرے؟ انسان برے وقت کو صبر‘ خوش دلی اور حوصلے کے ساتھ گزارے جبکہ یہ اپنے اچھے وقت کو عاجزی‘ خدمت اوردوسروں کی فلاح و بہبود میں صرف کرے۔ اللہ تعالیٰ ان دونوں قسموں کے لوگوں کی قدر کرتا ہے‘ وہ برے وقت میں حوصلے کا مظاہرہ کرنے والوں کو بھی پسند کرتا ہے اور اچھے وقت میں عاجزی کا دامن پکڑے رکھنے والوں کو بھی۔اگر انسان پر برا وقت آئے تویہ بس اپنے رویئے کی تھوڑی سی اصلاح کر لے تویہ برا وقت بھی اچھا بن جائے گابس رویہ اور سوچ مثبت کرناہو گا۔