Web
Analytics
چوہدری پرویز الہی کے مثالی کام اور ایک سرسری عوامی سروے ۔۔۔ فرحت عباس شاہ – Lahore TV Blogs
Home / منتخب کالم / چوہدری پرویز الہی کے مثالی کام اور ایک سرسری عوامی سروے ۔۔۔ فرحت عباس شاہ

چوہدری پرویز الہی کے مثالی کام اور ایک سرسری عوامی سروے ۔۔۔ فرحت عباس شاہ

کبھی آپ نے سوچا ہے کہ ہماری سیاست میں سیاسی جدوجہد کا تصور کیوں جڑا ہوا ہے ؟ـ اور جدوجہد کے ساتھ جلسے ، جلوس ، جیلیں ، لاٹھیاں ، آنسوگیس اور اب تو سیدھی گولیاں ںشامل ہوچکی ہوئی ہیں ۔ دنیا نے مجمع خلاف سرکار کو پیچھے دھکیلنے کے لیے آنسوگیس کی شیلنگ کی جگہ واٹر کینن کا استعمال شروع کر رکھا ہے جبکہ ہم کرپشن ، غربت اور تشدد میں آگے سے آگے ہی بڑھتے چلے جارہےہیں ۔ خاص طور پر نواز شہباز کو اپنی سیاسی ساکھ برقرار رکھنے کے لے اور خود کو بہترین لیڈر ثابت کرنے کے لیے جو جو عظیم پراجیکٹس

بنانے پڑے ان میں بھی نہایت آگے کی اور جدید سوچ کارفرما تھی ۔ یعنی ایسے پراجیکٹس جو جتنے عظیم نظر آئیں اتنے ہی کمیشن بخش بھی ہوں ۔ اور اگر پندرہ ارب سے شروع ہوں توم از کم پپنیس ارب پہ جاکے ختم ہوں ۔ ادویات کی پرائیس کنرول کمیٹیاں پیٹرول کی طرح ادویات بنانے والی اور ادویات امپورٹ کرنے والی کمپنیوں سے کمیشنیں بٹورنے اور عوام کے علاج کو اپنے ناجائز منافع بخش بزنس میں بدلنے کے لیے ہمیشہ نہایت ثابت قدم اور پر اعتماد نظر آتی رہیں ۔ لاہور کوپچھلے سالہا سال سے ماحولیاتی آلودگی اور ٹریفک کی بے ہودگی کا شکار رکھنے والی پنجاب حکومت میٹرو بس سروس کی زبوں حالی کی طرف مڑکے دیکھے بغیر اورنج ٹرین منصوبے کی لاگت بڑھانے پر مسلسل غور فرما رہی ہے اور ٹی وی چینلز و اخبارات میں شایع کیے جانے والے اشتہارات میں تو ان منصوبوں سے لاہور بلکہ سارے پاکستان کے عوام کی تقدیر بدل چکی ہے ۔ دانش سکولوں نےگویا دنیا بھر کی بڑی بڑی یونیورسٹیوں کو پیچھے چھوڑدیاہے ۔ میاں شہباز شریف بہت پرجوش اور طاقتور وزیر اعلی ہیں ۔ اسسٹنٹ کمشنر سے لیکر چیف سیکریٹری تک سیلف ریسپیکٹ رکھنے والا ہر بیوروکریٹ ان کے سامنے جانے سے کتراتا ہے ۔ محکمہ جاتی کام ان کے اشارہ ابرو کے منتظر رہتے ہیں ۔ سی این ڈبلیو کے ادب دوست سیکریٹری ایک دفعہ فرمانے لگے کہ خدا کا شکر ہے میں پنجاب کے ایک کرپٹ ترین محکمے کا سیکریٹری ہوں اور یہاں میری حیثیت کسی کلرک سےزیادہ نہیں ۔ لیکن اتنی ساری بھاگ دوڑ اور اشتہاراتی مہمات کا نتیجہ کیا نکلا ؟ لوگ آج تک چوہدری پرویز الہی کے کیے گئے چند موثر کا نہیں بھول پائے ۔ اور ادھر میاں شہباز شریف کی بہت ساری اضطراری حرکات سے لگتا ہے کہ ان کو اگر کہیں نیند میں بھی اپنی ناکامی نظر آتی ہوگی تو وجہ

چوہدری پرویز الہی کا مختصر دور ہی محسوس ہوتا ہوگا ۔ چوہدری پرویز الہی کے دور میں کیے گئے چند انقلابی کام ۔ 1122, پڑھالکھا پنجاب , کسان دوست پالیسی , فریننزک لیب , ملتان کارڈیالوجی اور گجرات یونیورسٹی ، جن بربادی کے لیے کی جانے والی ہر کوشش ناکام ہوئی اور جو لوگوں کے دلوں میں جم کرکھڑے محبت اور احترام کے ایسے ستون ثابت ہوے کہ کسی سے ہلائے نہیں گئے ، سوائے میو ہسپتال کے غالبا سو بیڈز سے زیادہ بنائے جانے والے وارڈ کے جس کی تعمیر خادم اعلی کی مسلسل سیاسی جدوجہد سے رک چکی ہے اور اس

کامیابی پر لاہور اور پنجاب کے غریب مریض بین ڈال ڈال کر میاں صاحب کو بد دعائیں دیتے نہیں تھکتے ۔ آج لوگ چوہدری پرویز الہی کا دور یاد کرکے اس کا ذکر کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ مونس الہی ایک نہایت شائیستہ اور پیار بھری شخصیت کا نام ہے ۔ میاں شہباز شریف سے ان کے قریب ترین لوگ گھبراتے ہیں جبکہ چوہدریوں کے سے ملنے کے لیے بے چین رہتے ہیں ۔ چویدری پرویز الہی کی نرم گوئی اور چوہدری شجاعت کی شفقت لوگوں کو کسی مہربان ساۓ کی طرح لگتے ہیں ۔ یہ ہے پنجاب میں آنے والی سیاست کا عوامی سروے لیکن ہے

کسی ن لیگی مشیر کی جرات کہ وزیر اعلی پنجاب کے کانوں میں ڈال سکے کہ شہنشاہ معظم اب تو آپ اچھے منتظم بھی نہیں رہے ۔ نیب آپ کے سر پہ آپہنچی ہے اور عابد باکسر دوبئی سے کسی وقت بھی روانہ ہوسکتا ہے ۔ یہ بھی ممکن ہے کوئی وعدہ معاف گواہ بتا دے کہ محکموں کا ریکارڈ بار بار کیوں جلایا جاتا رہا ۔
کہے ہیں لوگ ترا اختیار ڈوب گیا
یہیں کہیں پہ کوئی اقتدار ڈوب گیا
عوای سروے کی ایک بات اور بھی کہ ان گنت لوگ اس انتظار میں بیٹھے ہیں کہ میاں برادران تاج و تخت کے گھوڑے سے نیچےآئیں ذرا عوامی عدالت میں تو انکو بتائیں کہ جناب آپ نے ہمارے ساتھ بہت ظلم و زیادتی روا رکھی ۔ اب ہم سے بھی کسی اچھائی کی توقع مت رکھئیے گا۔
(بشکریہ روزنامہ جناح)